ذیابیطس درجہ اول کے علاج میں قابل توجہ پیشرفت

مہر نیوز :امریکی ماہرین نے شوگر کے انتہائی خطرناک مریضوں کے لئے ایسا مرکب تیار کرلیا ہے جو کئی ماہ تک انسولین تیار کر کے خون میں شکر کی مقدار کو مقررہ

© مہر نیوز


حد کے اندر رکھ سکے گا۔

مہر خبررساں ایجنسی نے ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ امریکی ماہرین نے شوگر کے انتہائی خطرناک مریضوں کے لئے ایسا مرکب تیار کرلیا ہے جو کئی ماہ تک انسولین تیار کر کے خون میں شکر کی مقدار کو مقررہ حد کے اندر رکھ سکے گا۔ امریکہ کی ہارورڈ یونیورسٹی سے تعلق رکھنے والے ماہرین کے مطابق ذیابطیس کے دو درجات ہوتے ہیں، درجہ اول کی بیماری اس وقت پیدا ہوتی ہے جب انسانی جسم کا دفاعی نظام خود ہی خون میں شکر کی مقدار کو قابو میں رکھنے والے ان ” بیٹا خلیوں ” کو تباہ کرنا شروع کردیتا ہے جو لبلبہ پیدا کرتا ہے اور اس بیماری کے شکار مریض اپنے جسم میں شکر کی مقدار کو کنٹرول نہیں کرسکتے،اس مرض میں مبتلا افراد کو گاہے بگاہے انسولین لینا پڑتی ہے، دوسرے درجے کی ذیابطیس غیر صحت مندانہ طرز زندگی کی وجہ سے ہوتی ہے تاہم انسان پرہیز کرکے اس مرض پرقابو پاسکتا ہے۔

سائنس دانوں نے کیمیائی اجزا پر مشتمل ایسا مرکب دریافت کیا جو اسٹیم سیلز کو فعال بیٹا خلیوں میں بدلنے کی صلاحیت رکھتا ہے اس کے لئے انہوں نے اسٹیم سیلز کی مدد سے لاکھوں ’’بیٹا خلیے‘‘ تخلیق کرکےانہیں چوہوں کے جسم میں داخل کیا، تجربات سے ظاہر ہوا کہ تجربہ گاہ میں تیار کردہ بیٹا خلیے کئی ماہ تک انسولین تیار کرکے خون میں شکر کی مقدار کو مقررہ حد کے اندر رکھ سکتے ہیں۔

Leave a Reply